پاکستان

مسلم لیگ ن کے دور حکومت کے آخری سال 18-2017 کا ایک اور بڑا کرپشن اسکینڈل سامنے آگیا

پنجاب ریونیو اتھارٹی نے مالی سال 18-2017  کے دوران راولپنڈی کے علاقے گوجر خان میں اراضی کے معاملے سے متعلق ایک معاملے میں 120 ملین روپے کی کرپشن کا پتہ لگا لیا۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی کی سات تحصیلوں سے گوجر خان کے تین مقامات پر زمین خریدنے کے منصوبے میں مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت کے آخری سال کے دوران میگا کرپشن کی اطلاع ملی۔ تاہم ، محکمہ ریونیو میں متعلقہ حکام بدعنوان عناصر کے خلاف کارروائی کرنے سے قاصر تھے۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ پنجاب ریونیو اتھارٹی نے تصدیق کی ہے کہ ڈمپنگ سائٹ کے لئے 1000 کنال سے زائد اراضی کا انتخاب کیا گیا تھا جبکہ راولپنڈی ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے اراضی کی خریداری کی منظوری دی تھی۔

دوسری جانب بورڈ آف ریونیو نے ایک بار پھر شامل امیج کی پیمائش کی جس میں 2400 کنال کے بجائے 2100 کنال اراضی ملی۔

بورڈ نے یہ انکشاف بھی کیا ہے کہ شامل زمین پہلے ہی حکومت کی ملکیت ہے ، لہذا بقیہ اراضی کی قیمت صرف 80 سے 90 ملین روپے ہے جبکہ راولپنڈی کی ضلعی انتظامیہ نے 270 ملین روپے لئے ہیں۔

ایک ’پٹواری‘ ، نے الزام لگایا کہ ان کے پاس بدعنوانی میں ملوث ہونے کے سوا اور کوئی آپشن نہیں ہے کیونکہ انہیں ہر ماہ اعلی حکام کو بھاری رقم بھیجنے کی ضرورت تھی

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button