پاکستان

پاکستان میں ایک روز میں کورونا سے سب زیادہ ہلاکتوں کی تعداد ریکارڈ

جمعرات کے روز تک ملک بھر میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 24,892 ہوگئی پنجاب میں 9,195 ، سندھ میں 9,093 ، خیبر پختونخوا میں 3,956 ، بلوچستان میں 1,663 ، گلگت بلتستان میں 388 ، اسلام آباد میں 521 اور آزاد جموں و کشمیر میں 76 مریضوں کی تعداد کل تعداد 24،892 ہوگئی۔ اس وائرس سے اب تک جاں بحق افراد کی تعداد 591 ہوگئی ہے جبکہ اب تک 6،464 کورونا وائرس کے مریض ٹھیک ہوگئے ہیں۔

محکمہ صحت خیبر پختونخواہ کے مطابق ، خیبر پختونخوا میں کم از کم 244 نئے کورونا وائرس کیسوں کی تصدیق ہوگئی ، جس کی صوبائی تعداد 3،956 ہو گئی۔ صوبے میں اس وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 209 ہوگئی جبکہ چھ نئی اموات کی اطلاع ملی – چار پشاور اور ایک ملاکنڈ اور مانسہرہ میں ایک۔ کے پی کے وزیر ہائوسنگ ڈاکٹر امجد علی نے اپنا کورونا کے ٹیسٹ کروایا جس کا نتیجہ مثبت آگیا ہے۔انہوں نے گھر میں خود کو آئسولیٹ کر لیا ہے۔

کے پی سینیٹر مرزا آفریدی کا بھی دوسری مرتبہ لیا گیا کورونا ٹیسٹ پاریٹو آگیا۔ 27 اپریل کو ان کا پہلا  ٹیسٹ لیا گیا تھا جس کا نتیجہ مثبت آیا تھا۔ سینیٹر نے 10 دن بعد ایک اور ٹیسٹ کروایا اور نتیجہ دوبارہ مثبت آگیا۔ انہوں نے گذشتہ 11 دن سے اپنے آپ کو قرنطین میں رکھا ہوا ہے۔

بلدیاتی حکومت کے چیف منسٹر کے معاون خصوصی کامران بنگش کورونا وائرس سے صحت یاب ہوگئے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے گذشتہ ماہ کورونا کا ٹیسٹ کروایا تھا جو کہ مثبت آیا تھا ، اور دوبارہ ٹیسٹ کروایا جو کہ منفی آیا ہے انہوں  نے کہا کہ ان کا ٹیسٹ جمعرات کے روز 14 دن تک قرنطین رہنے کے بعد منفی آیا۔ خیبر پختونخوا ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن (وائی ڈی اے) سدرن ریجن کے صدر ڈاکٹر فہیم اللہ محسود نے کورونا وائرس کا ٹیسٹ کروایا جو کہ مثبت آگیا ہے۔ وائی ڈی اے کے  ایک بیان کے مطابق ،ڈاکٹر فہیم محسود سمیت 115 ڈاکٹر اب تک سانس کی بیماری میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ اس میں مزید کہا گیا کہ مریض کے ساتھ رابطے میں آنے والے تمام افراد کی جانچ کی جائے گی۔ ایسوسی ایشن نے حکومت پر زور دیا کہ وہ لاک ڈاؤن کے سخت اقدامات نافذ کرے ، اور مزید کہا کہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ تشویشناک ہے۔ ڈاکتڑ فہیم خیبر ٹیچنگ اسپتال کے شعبہ ریڈیالوجی میں کام کر رہے تھے۔

پنجاب کے پرائمری اور سیکنڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ میں کورونا وائرس کے 502 نئے کیس رپورٹ ہوئے ، جن میں صوبائی تعداد کل 9،195 ہو گئی۔ اس میں 26 اموات بھی ہوئیں ، جو اب تک کسی بھی صوبے میں ایک دن میں سب سے زیادہ ہے۔ پنجاب میں اموات کی مجموعی تعداد 182 ہوگئی ہے۔ محکمہ کے مطابق اب تک 3201 افراد صحت یاب ہوئے ہیں جبکہ 22 کی حالت تشویشناک ہے۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا وائرس سے 14 افراد کی ہلاکت کے بعد سندھ میں یومیہ سب سے زیادہ ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں۔ صوبے میں اموات کی مجموعی تعداد 171 ہوگئی ہے۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ اموات کی شرح 1.9 فیصد ہے ہم قیمتی جانیں ضائع کررہے ہیں اور اگر ہم سب معیاری آپریٹنگ طریقہ کار اور ماہرین کے اصولوں پر عمل کریں تو ہم اس پر قابو پاسکتے ہیں۔” انہوں نے بتایا کہ 453 نئے کیسز کی اطلاع کے بعد سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی کل تعداد 9000 ہوگئی ہے جو باقی صوبوں کی نسبت سب سے زیادہ ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران 3،534 ٹیسٹ کیے گئے تھے ، جن میں سے 453 کے رزلٹ مثبت آئے ہیں ، جس سے صوبے کی تعداد 9،093 ہوگئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 87 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے جبکہ 14 افراد وینٹیلیٹروں پر ہیں۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button