Cars

چین! دنیا کا سب سے بڑا آٹوموٹو مینوفیکچرنگ ملک

چین 2009 سے لے کر اب تک دنیا کا سب سے بڑا آٹوموٹو مینوفیکچرنگ ملک اور آٹوموٹو مارکیٹ بنا ہوا ہے۔ 2018 میں ، چین میں سالانہ گاڑیوں کی پیداوار دنیا بھر میں گاڑیوں کی پیداوار کا 30 فیصد سے زیادہ رہا ، جو یوروپی یونین یا امریکہ اور جاپان کے مشترکہ ممالک کی پیداوار سے زیادہ ہے۔

آٹوز ، بشمول نئی انرجی گاڑیاں  ، میڈ ان چائنا 2025 پروگرام کے 10 شعبوں میں سے ایک ہیں ، جو ملک کی صنعت کو کم لاگت سے بڑے پیمانے پر پیداوار سے اعلی ویلیو ایڈڈ جدید ترین مینوفیکچرنگ تک اپ گریڈ کرنے کا ایک حکومتی اقدام ہے۔

چین کا “آٹوموبائل وسطی اور طویل المیعاد ترقیاتی منصوبہ” ، جو اپریل 2017 میں جاری ہوا ، اس اقدام کی حمایت کرتا ہے، “چین کو دس سالوں میں ایک “مضبوط” آٹو پاور بنانے کا مقصد”

 اس منصوبے میں (این ای وی) ، منسلک اور خودمختار گاڑیوں کی ترقی کو اجاگر کیا گیا ہے کیونکہ چین کو ایک ابھرتی ہوئی مارکیٹ پر غلبہ حاصل کرنے کا موقع فراہم کیا گیا ہے۔ آٹو پارٹس / برانڈز میں قومی چیمپین کی تشکیل ، منسلک کار ٹکنالوجی ، ڈرائیور امداد ، اور خود مختار نظاموں سے متعلق متعدد  اہداف طے کیے گئے ہیں۔ اضافی رہنما خطوط (این ای وی)  انجن ، پلگ ان ہائبرڈ انجن ، فیول سیل سسٹم اور کلیدی اجزاء ، چارجنگ اسٹیشنز ، بیٹری مینوفیکچرنگ سہولیات اور جانچ کے آلات پر مرکوز ہیں۔

The traditional “Big Four” Chinese  car manufacturers are SAIC Motor, Dongfeng, FAW and Chang’an. Other domestic  car manufacturers are Geely, Great Wall, Beijing Automotive Group, Brilliance Automotive, Guangzhou Automobile Group,  BYD, Chery and Jianghuai.

چین کی آٹو موٹو مارکیٹ کی ترقی کا ایک اہم عنصر حکومت کی پالیسیاں ہیں، جوجدت اور معیار کو کو سامنے رکھتے ہوئے نہ صرف لوکل آٹو موٹو انڈسٹری  کو سپورٹ کرتی ہیں بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی قابلِ تقلید ہوتی ہیں۔ حکومتی پالیسیوں کےذریعے آٹو موٹو انڈسٹری کی مضبوط نشوونما کے علاوہ ایک اور اہم ترین حکمت عملی مینو فیکچرنگ کیپسٹی یوٹیلائزیشن ہے۔ جس سے چین کی آٹو موٹو انڈسٹری دنیا کی بہترین اور بڑی انڈسٹری بن گئ ہے۔

چین کی آٹو موٹو انڈسٹری کی ترقی کا ایک اہم پہلو ” نئ توانائی گاڑیاں”  یا این ای وی ہےاور بجلی کی گاڑیاں یا ای وی ایس ہے۔

جو بہتر فیول ایکونومی اور آلودگی کو کم کرنے کے حوالے سے بہترین ہیں۔ چینی مینوفیکچرز کے عالمی عزائم بھی ہیں۔ چائنہ کی آٹو موٹو انڈسٹری نہ صرف چین کے اندر نئے پلانٹس لگا رہی ہے بلکہ بیرون ملک بھی پوری دنیا میں اپنے آٹو موٹو پلانٹس کو توسیع دے رہی ہے۔

GMMotors, Toyota

اور دنیا کے بڑے آٹو برانڈز چائنہ کی ای وی ایس  انڈسٹری سے سیکھ رہیں ہیں۔

چین کے بارے میں ایک گہری بصیرت جومینوفیکچرنگ سمیت ہرچیز پر اثر اندازہوتی ہے،وہ یہ احساس ہے کہ چین ان سب چیزوں اور پالیسیز کو بہتر انداز سے آگے لے کر جا رہا ہے،جو اپنے فطری انجام تک پہنچ چکی ہیں۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also
Close
Back to top button