Carsکاروبار

پاکستانی آٹوانڈسٹری ترقی کے راستے پر

پاکستان میں کورونا پر کا فی حد تک قابو پا لیا گیا ہے اور معیشت بحال ہو رہی ہے۔ پاکستان کی  آٹو انڈسٹری ، تیزی سے ترقی کرتی ہوئی انڈسٹریز میں سے ایک ہے، ایک رپورٹ کے مطابق آٹو انڈسڑی میں آئندہ سال کے آخر تک دس ہزار پاکستانی روزگار حاصل کرینگے۔

پاکستانی آٹوانڈسٹری ترقی کے راستے پرپوری صلاحیت سے چل پڑی ہے، مارچ 2021 تک تمام آٹو موبائل اسمبلرز دو دو نئے ماڈل متعارف کرائیں گے۔

ملائیشیاء کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے جو کار دورہ پاکستان کے دوران وزیراعظم عمران خان کو دی تھی، اس کار کا مینوفیکچرنگ پلانٹ پاکستان میں لگ رہا ہے۔ نئ کار کا نام پروٹون ہو گا۔ اس کے علاوہ شنگھاہی چائنا میں بننے والی ایم جی موٹر کار جو پہلے برطانیہ مورس کے نام سے بناتا تھا، اس کے دو ماڈل مارکیٹ میں آ جائینگے ۔

چائنا کار کا پلانٹ ہائر  گروپ رائے ونڈ میں لگا رہا ہے۔ ہونڈا ، ٹویوٹا ، کیا ، ہنڈائی ، پروٹون اورایم جی جیسے نئے پلیئر آٹو انڈسڑی میں آنے سے پاکستان میں کاروں پر اون ختم ہو کر رہ گیا ہے جو پہلے تین لاکھ روپے تک چلا گیا تھا-

آٹو انڈسٹری کی بحالی سے متاثر ہوکر بینکوں نے لیزنگ ریٹ 9 فیصد تک کم کر دیئے ہیں، کیونکہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے انٹرسٹ ریٹ  13.25 سے کم کر کے 7 فیصد کر دیا ہے اور کار لیزنگ صرف  2  فیصد مزید منافع پر بینکوں نے کرنے کا مشترکہ اعلان کیا ہے۔

بہتر مسابقت ، نئے پلیرز اور کار لیزنگ میں سہولت کی وجہ سے پاکستان میں گاڑیوں کی قیمتیں کم ہونگی –

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Check Also
Close
Back to top button