کالم

‎وزیر اعلیٰ پنجاب کی نوجوانوں کیلئے کوششیں

پوری دنیا میں ہر ملک اپنے نوجوانوں پر خاص توجہ دیتا ہے کیونکہ نوجوان ہی ملک کا مستقبل اور سرمایہ ہوتا ہے۔ پاکستان بنانے میں بھی نوجوانوں کا بڑا کردار ہے اور آج پاکستان کے اندر موروثی سیاستدانوں سے جان چھڑوانے اور تبدیلی لانے میں نوجوانوں کا بڑا رول ہے۔نوجوانوں نے یہ امید لگا رکھی تھی کہ تحریک انصاف کی حکومت آئے گی تو ان کا مستقبل بہتر ہوگا، اب بے روزگار نوجوانوں کی نظریں وزیراعظم پاکستان عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب پر لگی ہوئی ہیں۔پہلے جو بھی حکومت آتی تھی نوجوانوں کے حقوق کے متعلق کوئی نہ کوئی پالیسی کا اعلان تو کرتی تھی مگر اس کے اوپر کوئی عمل درآمد نہ کرتی تھی جس سے نوجوانوں کا کچھ فائدہ نہ ہو سکا۔عمران خان 23 سال کی جدو جہدمیں جہاں بھی تقریر کرتے نوجوانوں کو ہنر مندکرنے کی بات کرتے تھے،وہ نوجوانوں کو ذہنی غلام بنانے کی بجائے ان کو اپنے پاوں پر کھڑا کرنا چاہتے تاکہ نوجوان خودداری سے اپنا کام کریں۔ پاکستان میں تو میٹرک کرنے کے بعد ہر نوجوان نوکری کی تلاش میں نکل جاتا ہے، عمران خان کا ویژن یہ تھانوجوانوں کو نوکری کی بجائے انہیں ہنر مند بنانا چاہیے۔
اب وزیراعلیٰ پنجاب ، عمران خان صاحب کے اس ویژن کو تیزی کے ساتھ لے کر چل رہے ہیں، نوجوانوں کو ہنر مند بنانے کے کئی مقامات پر پروگرام کا آغاز ہو چکا ہے۔پاکستان کی آبادی جس کا زیادہ تر حصہ نوجوانوں پر مشتمل ہے اس ینگ جنریشن کو بوجھ کی بجائے ملکی ترقی کا کارآمد حصہ بنانے کے لیے جو پروگرام کا آغاز کیا جا رہا ہے اس کی تفصیل کچھ اس طرح بیان کی جا رہی ہے کہ اس پروگرام سے بالخصوص 16سے30 سال کی عمر کے نوجوان مستفید ہونگے، پچھلے ایک سال میں تقریباََ1لاکھ نوجوانوںکو ٹیوٹاکے ذریعے سکلزڈویلپمنٹ کی ٹریننگ دی گئی جبکہ اس پروگرام کے آغاز سے مزید 1 لاکھ نوجوان ٹیوٹا کے انسٹی ٹیوٹ سے سکلزڈویلپمنٹ اور ٹیکنیکل ووکیشنل ٹریننگ حاصل کر سکیں گے۔ وزیرِ اعلیٰ پنجاب نے ہنر مند نوجوان پروگرام کے لیے 1.5 ارب روپے کی رقم مختص کی ہے۔ٹیوٹا انسٹیٹیوشن میں نوجوانوں کو مفت تعلیم اور ٹریننگ دی جائے گی جس سے وہ معاشرے کا اہم اور خود مختار رکن بن کر ابھرے گا۔ اس پروگرام کے تحت نوجوانوں کو ایسے ہنر سیکھائے جا سکیں گے جسکی صنعتی شعبہ میں مانگ ہو گی۔اس پروگرام کے تحت ہر سال 15فیصد سے زائد سکلڈ ہیومن ریسورس بیرون ملک ایکسپورٹ کیا جا سکے گا یہ پروگرام ایمپلائی اور ایمپلائرز کے درمیان ٹیکنالوجی اور سکلز گیپ کو ختم کر کے ملازمتوں کے نئے مواقع فراہم کرائے گا ۔
حکومت دیگر سرکاری و نجی اداروں کے تعاون سے اس پروگرام کو مزید آگے بڑھانے کے لیے کوشاں ہیں،ابھی ٹیوٹا کے کچھ طالباءیونیورسٹی سے ٹریننگ حاصل کر کے اپنا اپنا کاروبار شروع کر چکے ہیں اسی طرح دیگر نیشنل اور ملٹی نیشنل اداروں کے اشتراک سے چیف منسٹر ہنر مندپروگرام وزیراعظم کے ایک کروڑ نوکریوں کے ویژن کو حقیقت بنانے میں کوشاں ہیں۔
تحریک انصاف کی حکومت میں خاص طور پر پنجاب میں پہلی بار انسانی حقوق کی طرف بھرپور توجہ دی جا رہی ہے۔ اقلیتوں کو حقوق،انکی مذہبی آزادی اور اقلیتی مذہبی مقامات پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے،پنجا ب ہیومن رائٹس پالیسی کے ایکشن پلان کا اجراءصوبائی ٹاسک فورس برائے انسانی حقوق کے پلیٹ فارم سے انسانی حقوق کی پالیسی اور ایکشن پلان کی مانیٹرنگ کا اہتمام، انسانی حقوق کی ضلع کمیٹیوں کے نوٹیفیکیشن کا اجراءمحکمہ انسانی حقوق اقلیتی امور کی طرف سے انسانی حقوق کی ضلعی کمیٹیوں کے ممبران کے لیے کپیسٹی بلڈنگ کے سیشن کا انعقاد اس حکومت کے خصوصی اقدامات ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ پنجاب حکومت کا کہنا ہے کہ پنجاب سکل ڈویلپمنٹ فنڈکے ذریعے آئندہ2سال کے دوران5000 اقلیتی نوجوانوں کی تربیت کے پروگرام کا اجراءکیا جائے گا۔
وزیرِ اعلیٰ پنجاب اپنی خصوصی کاوش سے تقریباََہر شعبے پر بھرپور توجہ دے رہے ہیں مگر تحریک انصاف کی حکومت میں ابھی تک زراعت کا شعبہ عدم دلچسپی کا شکار نظر آ رہا ہے۔ ان کو خاص طور پرکسانوں کے لیے بہت اچھی پالیسی بنانی ہوگی۔ جس طرح سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے پڑھا لکھا پنجاب کا نعرہ لگایا تھااسی طرح عثمان بزدار کو بھی مثالی پنجاب کاشتکارکا نعرہ لے کر آنا چاہیے، اگر پنجاب حکومت زراعت کی طرف تھوڑی سی توجہ دیں تو پنجاب کے نوجوان کاشتکار زراعت کو بہت آگے لے کر جا سکتے ہیں۔انہیں زراعت کے فروغ کے لیے اچھی پالیسیاں متعارف کروانی چاہیے۔
کاشتکاروں کو سستی بجلی اور بغیر سو د کے قرضہ دینا چاہیے، بیج کی اعلیٰ کوالٹی مہیا کرنی چاہیے اس کے ساتھ ساتھ پنجاب کو مثالی کاشتکاری کے لیے کسانوں میں آگہی پیدا کرنی چاہیے پھر پنجاب دن دگنی رات چوگنی ترقی کرے گااور وز یراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو ہمیشہ سنہری حروف میں یاد رکھا جائے گا۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button