پاکستان

محکمہ خوراک سندھ نے نیب سے 10 ارب روپے مالیت کی گندم کے غائب ہونے کی تفتیش کا مطالبہ کردیا

کراچی : محکمہ خوراک سندھ نے قومی احتساب بیورو سے 10 ارب روپے مالیت کی گندم کی گمشدگی کی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

محکمہ نے خط میں کہا ہے کہ گندم کی 114000 بوریاں لاپتہ ہوگئی ہے جب انہیں گھوٹکی سے کراچی منتقل کیا جارہا تھا۔

خط میں مذکور ہے کہ حکومت کے گوداموں سے بھی تقریبا ایک لاکھ گندم کی بوریاں غائب ہوگئیں۔

محکمہ خوراک نے اینٹی گرافٹ واچ ڈاگ پر بھی زور دیا کہ وہ ان لوگوں کیخلاف بھی کاروائی کریں جو 2018 اور 2017 میں گندم چوری کرنے کے ذمہ دار تھے۔

محکمہ نے اس خط کے ساتھ اپنی انکوائری کی رپورٹ بھی منسلک کی اور مطالبہ کیا کہ اس رقم کو واپس کیا جائے۔

صوبہ کے 15 مختلف اضلاع میں واقع گوداموں میں 10 ارب روپے مالیت کی حکومت سندھ کی گندم بڑی مقدار میں لاپتہ ہوگئی ہے۔

ابتدائی تفتیش کے بعد ، محکمہ خوراک نے باضابطہ طور پر نیب سے جامع تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا ہے

ایک روز قبل محکمہ خوراک سندھ نے تمام ڈپٹی ڈائریکٹرز فوڈ اینڈ ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولرز کو ہدایت کی کہ وہ ضلعی انتظامیہ سے رابطہ کریں تاکہ وہ صوبے سے باہر گندم کی نقل و حمل اور مقامی اسٹاکسٹس کے ذخیرے کے خلاف کارروائی کریں تاکہ قیمتوں میں اضافے اور گندم کی قلت کو روکا جاسکے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button