پاکستان

گزشتہ 24 گھنٹوں میں 4 ڈاکٹرز کوویڈ 19 سے متاثر ہو کر ہلاک

فرنٹ لائن پر کوویڈ ۱۹ سے لڑنے والے بہت سے سرکاری ڈاکٹر وائرس سے متاثر ہوں چکے ہیں۔ پچھلے 24 گھنٹوں میں چار ڈاکٹرز اسِ موزی مرض سے لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ گوجرانوالہ سٹی کے سینئر ماہر نفسیات ڈاکٹر نعیم اختر ، لاہور شہرکے نجی اسپتال کی خاتون ڈاکٹر ثناء فاطمہ،کے پی کے سے افغانستان سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر خانزادہ اور کوئٹہ شہر سے بی ایم سی ٹراما سنٹر کے انچارج ڈاکٹر زبیر احمد جان کورونا وائرس سے لڑتے ہوۓ اپنی زندگی کی بازی ہار چکے ہیں۔
شہر فیصل آباد میں سرکاری ہسپتال سے تعلق رکھنے والے پچپن میڈیکل اسٹاف بھی کوویڈ ۱۹ سے متاثر ہوں چکے ہیں۔ ایم ایس جنرل ہسپتال لاہور ڈاکٹر محمود صلاح الدین میں بھی کورونا وائرس کی تشخیص ہوئ ہے اور وہ اب قر نطینہ میں ہیں۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے متاثرہ ڈاکٹروں کے لئے ہسپتالوں میں الگ قرنطینہ سنٹر بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ بہت سارے ڈاکٹرز گھروں میں قرنطینہ ہیں ، جس سے ان کے اہل خانہ کے بھی متاثر ہونے کے خدشات موجود ہیں۔ ایسوسی ایشن نے بتایا کہ 90 سے زیادہ ڈاکٹرز اور 10 سے زیادہ نرسیں کورونا وائرس سے متاثر ہوئی ہیں۔ صوبہ پنجاب کے دارالحکومت شہر لاہور کے ینگ ڈاکٹرز نے دھمکی دی کہ اگر ڈاکٹرز کے لئے الگ تھلگ کمرے نہ مہیا کئے گئے تو وہ نجی ہسپتالوں میں کام نہیں کریں گے۔ ڈاکٹرز نے حکومت کے شاپنگ مالز کھولنے کے فیصلے پر سخت تنقید کی۔وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا نے بتایا کہ ملک بھر میں 57 افراد ایک ہی دن میں کورونا وائرس سے متاثر ہو کر ہلاک ہوۓ ہیں۔ کورونا کے مریضوں اور ان کی اموات کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔ ظفر مرزا نے بتایا کہ اس وقت ایک سو ستاون افراد وینٹیلیٹر پر ہیں

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button